ماحولیاتی آلودگی سے صرف ایک ملک نہیں بلکہ تمام علاقائی ممالک اس کے شکار ہیں: پاکستانی عہدیدار

تہران - ارنا - پاکستانی محکمہ موسمیاتی تبدیلی کے ڈائریکٹر جنرل برائے ماحولیاتی امور کا کہنا ہے کہ آج صرف ایک ہی ملک نہیں بلکہ خطے کے تمام ممالک ماحولیاتی آلودگی اور موسمیاتی مسائل کے شکار ہیں.

یہ بات تہران میں منعقدہ بین الاقوامی انسداد ماحولیاتی آلودگی کی کانفرنس میں شریک پاکستانی مندوب 'محمد عرفان طارق' نے بدھ کے روز ارنا نیوز ایجنسی کی اردو سروس کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے منعقدہ عالمی کانفرنس کے مقاصد اور موضوعات کے حوالے سے کہا کہ اس ریجن اور تمام علاقائی ممالک میں بارش کی کمی کی وجہ سے فضا میں موجودہ ڈسٹ پارٹیکلز معاشرے، صحت، کمیونیکیشن، پروازوں کے لئے بہت ہی ضرر رساں ہے اسی لئے تمام علاقائی ممالک کو ایسے مسائل کے حل کے لئے اپنے تجربات اور اچھی پالیسیاں تبادلہ کرنا چاہیئے.

محمد عرفان طارق نے منعقدہ بین الاقوامی کانفرنس کے اثرات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی میزبانی میں اس عالمی کانفرنس کا انعقاد ایک انقلابی اقدام اور تمام علاقائی قوموں کے لئے انتہائی مفید ہے کیونکہ تمام خطے ماحولیاتی آلودگی کے مسائل کا شکار ہیں اور اس کے حل کے لئے اچھی حکمت عملی پیش کرنا نہایت ضروری ہے.

پاکستانی مندوب نے کہا کہ پاکستان کو بھی دوسرے ممالک کی طرح ایسے مسائل کا سامنا ہے جو اقوام متحدہ کے بائیولوجیکل ڈائیور سٹی اور آن کلائمیٹ چینج کنونشن نے اس مسائل کے حل کے لئے معاہدے پر دستخط کیا ہے.

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ماحولیاتی آلودگی کو کنٹرول کرنے میں جنگلات کا بہت اہم کردار ہے اور پاکستانی وزیر اعظم نے اس حوالے سے گرین پاکستان پروگرام لانچ کرتے ہوئے جس کا مقصد فورسٹری کی حفاظت ہے اور پاکستانی پارلیمنٹ نے کلائیمیٹ چینج ایکٹ ۲۰۱۷ کو پاس کیا ہے جس کے تحت پاکستان میں ایک کلائیمیٹ چینج کونسل بنے گی.

عرفان طارق نے کہا کہ اقوام متحدہ، تمام علاقائی ممالک، عالمی برادری، اقتصادی تعاون تنظیم اور عالمی حکومتوں کو انسداد ماحولیاتی آلودگی کے حل کے لئے سنجیدہ منصوبہ بندی اور موثر اقدامات کرنا چاہیئے.

تفصیلات کے مطابق، ایرانی دارالحکومت 'تہران' میں بین الاقوامی انسداد ماحولیاتی آلودگی کی کانفرنس کا پیر کے آغاز ہوگیا جس میں 43 ممالک کے وزرا اور اعلی نمائندے شریک تھے.

اسلامی جمہوریہ ایران ماحولیاتی آلودگی کا مقابلہ اور گرد کے طوفانوں کے مسئلے پر توجہ دینے کے حوالے سے اہم اقدامات کر رہا ہے.

مٹی اور گرد کے طوفانوں سے دنیا کے مختلف علاقے متاثر ہورہے ہیں اس لئے ایران میں ہونے والی آئندہ کانفرنس میں دنیا کے مختلف ممالک کے نمائندوں نے شرکت کی.

گزشتہ سال اقوام متحدہ میں ماحولیاتی آلودگی کا مقابلہ کرنے کے لئے چار قراردادیں پاس کی گئیں جن میں ایران نے بھی اہم کردار ادا کیا.

تین روزہ بین الاقوامی کانفرنس میں انسداد ماحولیاتی آلودگی کے لئے علاقائی اور بین الاقوامی تعاون کا جائزہ لیا گیا.

9410*274**