اہواز میں ماحولیاتی آلودگی کا مقابلہ کرنا ہماری پہلی ترجیح ہے: اقوام متحدہ

اہواز - ارنا - اقوام متحدہ کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل نے کہا ہے کہ ایران کے جنوبی شہر 'اہواز' میں گرد کے طوفانوں اور ماحولیاتی آلودگی کا مقابلہ کرنا ہماری پہلی ترجیح ہے اور اس مسئلے کو اقوام متحدہ کی آئندہ جنرل اسمبلی کے اجلاس میں بھی اٹھایا جائے گا.

یہ بات 'ایرک سلہمیم' نے گزشتہ روز ایران کے جنوبی صوبے خوزستان میں منعقدہ انسداد آلودگی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اہواز شہر اور خوزستان صوبے میں آلودگی اور گرد کے طوفان کے حوالے سے سوشل میڈیا میں تصاویر آنے کے بعد ایران کا دورہ کرنے میں دلچسپی آئی جس کا مقصد اس مسئلے کے خاتمے کے لئے حکمت عملی بنانا ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ ان کا اہواز آنے کا اصل مقصد ماحولیاتی آلودگی کی خاطر سماجی اور عوامی مشکلات کو قریب سے دیکھنا اور اس حوالے سے تعاون فراہم کرنا ہے.

اقوام متحدہ کے نائب سربراہ نے بتایا کہ ایران میں گزشتہ دنوں منعقد ہونے والی عالمی انسداد ماحولیاتی آلودگی کانفرنس کے موقع پر خطی ممالک بالخصوص ایران کے ہمسایہ ملک ترکی اور عراق کے ساتھ بات چیت ہوئی اور گرد طوفانوں کے مسئلے کو بھی اٹھایا گیا.

انہوں نے کہا کہ گرد طوفانوں اور آلودگی سے نمٹنے کے لئے تین حکمت عملی پر کام کرنا ہوگا، سب سے پہلے اہواز میں آلودگی کا خاتمہ اہم ترجیح ہوگی اور اس مقصد کے لئے جھیل کے قیام اور جنگلات میں اضافے کی ضرورت ہے، دوسرے مرحلے میں شام، عراق، ترکی اور سعودی عرب کے ساتھ مذاکرات کرنے ہوں گے اور تیسرے مرحلے میں اقوام متحدہ اپنے وسائل کو بروئے کار لائے گی.

ایرک سلہمیم نے مزید کہا کہ گرد طوفان اور آلودگی کا مقابلہ کرنے کے حوالے سے ایک بین الاقوامی مرکز کا قیام عمل میں لایا جائے گا اور اس حوالے سے ایران کو مرکزی کردار حاصل ہوگا.

٢٧٤**