ایران کی تیل پیداوار روزانہ ٣٩ لاکھ بیرل سے تجاوز کرگئی: حکومتی ترجمان

تہران - ارنا - ایرانی حکومت کے ترجمان نے کہا ہے کہ ایران مخالف پابندیوں کے خاتمے کے بعد پہلی بار ملکی تیل پیداوار ٣٩ لاکھ بیرل سے تجاوز کرگئی.

یہ بات ' محمد باقر نوبخت' نے منگل کے روز تہران میں ایک پریس کانفرنس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے مزید کہا کہ ایرانی مائع گیس کی پیداوار 6 لاکھ 92 ہزار بیرل اور قدرتی گیس کی پیداوار یومیہ 8 لاکھ 52 ہزار بیرل تک پہنچ گئی ہے.

حکومتی ترجمان نے کہا کہ عالمی ظالمانہ پابندیوں کے باوجود ایران نے جوہری معاہدے کے بعد تیل اور گیس کے شعبوں میں اپنی پیداوار کو مزید بہتر کرنے میں نمایاں کارکردگی دیکھائی.

انہوں نے ایران کے جنوبی علاقے پارس جنوبی کی مشترکہ گیس فیلڈ پر ٹوٹل کمپنی کے ساتھ طے پانے والے پانچ ارب ڈالڑ معاہدے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یہ معاہدہ ایران، فرانس کی ٹوٹل کمپنی، چین اور ایرانی کمپنی پیٹرو پارس کے درمیان طے پاچکا ہے جس کا مقصد ایران میں گیس کی پیداوار میں روزانہ 2 ارب کیوبک میٹرتک اضافہ کرنا ہے.

واضح رہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے پیر کے روز سمندری گیس ذخائر کے فروغ کے لئے فرانسیسی کمپنی ٹوٹل کی قیادت میں ایک بین الاقوامی کنسورشیم کے ساتھ 4.8 ارب ڈالر کے معاہدے پر دستخط کردئے.

17 جنوری 2016 سے ایران مخالف عالمی پابندیوں کے خاتمے کے بعد یہ کسی بھی مغربی کمپنی کی ایرانی توانائی شعبے میں پہلی سرمایہ کاری ہے.

اس معاہدے کے مطابق، فرانس کی ٹوٹل اور ایران کی قومی کمپنی پیٹروپارس ایران کے جنوبی ساحلی علاقے میں واقع پارس جنوبی کے 11ویں فیز اور گیس ذخائر کے فروغ کے لئے مشترکہ تعاون کریں گی.

ایران کے توانائی شعبے میں ہونے والی 4.8 ارب ڈالر سرمایہ کاری میں ٹوٹل کمپنی کی سرمایہ کاری کی سطح اور معاہدے کی مجموعی نوعیت نہایت اہم ہے.

9410*274**