باہمی تعلقات کے فروغ کیلئے ایران،فرانس وفود کے تبادلوں میں اضافہ ناگزیر ہے: ظریف

تہران - ارنا - ایران کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور فرانس کے درمیان وفود کے تبادلوں میں اضافے سے باہمی تعلقات کو بڑھانے کی راہ میں موجود رکاوٹوں کا خاتمہ کیا جاسکتا ہے.

یہ بات 'محمد جواد ظریف' نے گزشتہ روز ایران کے دورے پر آئے ہوئے فرانسیسی دفترخارجہ کے ڈائریکٹرجنرل برائے یورپی اور امریکی امور 'کرسٹین ماسے' کے ساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے دونوں ممالک کے سیاسی مذاکرات کے تسلسل پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ایران اور فرانس کے تعلقات ایک صحیح راستے پر گامزن ہے لہذا امید ہے کہ دونوں ممالک کے مشترکہ تعاون، جاری رکھیں گے.

ایرانی وزیر خارجہ نے موجودہ علاقائی بحرانوں کا حوالہ دیتے ہوئے اور شامی حکومت اور عوام کو انسانی بنیادوں پر امداد کی فراہمی کے لیے ایران کی مکمل آمادگی کا اظہار کیا.

انہوں نے مزید بتایا کہ ایران، شام کے موجودہ مسائل کے حل کے لیے ایک سیاسی حکمت عملی کا پیچھا کر رہا ہے اور شامی تنازعات کے خاتمے کے لیے فرانس کے کسی بھی سیاسی طریقہ کار کا خیر مقدم کر رہا ہے.

اس موقع میں سنئیر فرانسیسی سفارتکار 'کرسٹین ماسے' نے ایران اور فرانس کے گہرے تعلقات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے بتایا کہ عالمی جوہری معاہدے کے بعد ایران اور فرانس کے تجارتی اور اقتصادی تعلقات میں نمایان بہتری آئی ہے .

فرانسی کی وزارت خارجہ کے سیکریٹری جنرل نے کہا کہ فرانس ، دونوں ممالک کے درمیان ممکنہ رکاوٹوں کو دور کرنے سے ایران اور فرانس کے تعلقات کو مزید فروغ دینے کا خواہاں ہے.

انہوں نے بھی جوہری معاہدے کے مکمل نفاذ پر فرانس کے مثبت موقف کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ فرانس، خلیج فارس ممالک کے تنازعات کو جلد خاتمہ کرنے کا خواہاں ہے اور اس بحران کے حل کے لیے فرانس، ممالک کے درمیان ثالثی کا کردار ادا کرنے کے لیے خیر مقدم کر رہا ہے.

٩٤١٠*٢٧٤**