ایرانی عوام امریکہ کی طرف سے مار گرائے جانے والے مسافربردار طیارے کے واقعے کو نہیں بھولیں گے: ظریف

تہران - ارنا - ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ امریکہ نے تین جولائی 1988 میں اپنے سمندری جنگی جہاز کے ذریعے ایران کے مسافربردار طیارے کو مار گرایا جس کے نتیجے میں 290 ایرانی شہری شہید ہوگئے مگر ایرانی عوام ہرگز اس امریکی جرم کو نہیں بھولیں گے.

'محمد جواد ظریف' نے اپنے ٹویٹر پیغام میں مزید کہا کہ امریکہ نے اپنے سمندری جہاز کے کمانڈر کو ایرانی سولین کو مارنے پر ایوارڈ دیا جس کو ایرانی عوام نہیں بھول پائیں گے.

یاد رہے کہ امریکی بحری جنگی جہاز یو ایس ایس ونسنز نے تین جولائی 1988 کو اسلامی جمہوریہ ایران کی قومی کمپنی ایران ایئر کے دبئی جانے والے ایئر بس اے-300 طیارے کو مار گرایا جس میں 66 بچوں سمیت 290 افراد شہید ہوگئے.

یہ واقعہ فضائی سانحوں کی تاریخ میں انسانی جانی نقصان کے حوالے سے اپنی نوعیت میں آٹھواں بدترین سانحہ تھا.

٢٧٤**