ایران،ٹوٹل کمپنی معاہدہ ایران اور فرانس کے تعلقات کیلئے بہت اہم ہے: ولایتی

تہران - ارنا - سنئیر ایرانی رہنما نے کہا ہے کہ ایرانی وزارت تیل اور فرانسیسی کمپنی ٹوٹل کے درمیان تعاون کا معاہدہ دونوں ممالک کے تعلقات کی توسیع کے لئے نہایت اہم کا حامل ہے.

یہ بات تشخیص مصلحت نظام کونسل کے سٹریٹیجک ریسرچ سینٹر کے چیئرمین 'علی اکبر ولایتی' نے پیر کے روز تہران میں فرانسیسی دفترخارجہ کے ڈائریکٹر جنرل برائے یورپی اور امریکی امور 'کرسٹین ماسے' کے ساتھ ایک ملاقات کے بعد صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور فرانس کے درمیان تجارتی حجم میں تین گنا اضافہ ہوا ہے اور ہم فرانس سمیت یورپ ممالک کے ساتھ پائیدار اقتصادی تعاون کو فروغ دینے کے لئے پُرعزم ہیں.

انہوں نے پیرس میں مجاہدین خلق تنظیم (MKO) کے ایران دشمن عناصر کی نشست پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے مزید کہا کہ فرانس کے ساتھ سیاسی، اقتصادی اور بین الاقوامی سطح پر تعلقات کو فروغ دینا ایران کی ترجیح ہے.

ولایتی نے کہا کہ فرانسیسی سفارتکار کے ساتھ اس حوالے سے تفصیلی گفتگو ہوئی اور مزید برآں ہم نے بھی اپنی ترجیحات پر زور دیا.

انہوں نے کہا کہ پیرس میں ایران دشمنوں کی سرگرمیوں پر ہمیں شدید تحفظات ہیں اور منافقین تنظیم کے عناصر جیسے دہشتگردوں کی میزبانی کرنا یقینا علاقائی اور عالم امن و استحکام کے لئے ایک منفی پیغام ہے.

بعض مغربی ممالک کی جانب سے داعش دہشتگرد تنظیم کی حمایت کا حوالہ دیتے ہوئے سنئیر ایرانی رہنما نے کہا کہ جو ممالک داعش کی پشت پناہی کررہے تھے آج وہ خود اس لعنت کے دلدل میں پھنس چکے ہیں تاہم ایران دوسرے ممالک کے ساتھ تعلقات میں اپنی طے شدہ اصولوں کے تحت چلتا ہے.

ولایتی نے بتایا کہ انہوں نے سنئیر فرانسیسی سفارتکار کے ساتھ اپنی ملاقات میں اس بات پر زور دیا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران، تمام علاقائی ممالک بالخصوص شام، عراق اور یمن کی خودمختاری اور جغرافیائی سالمیت کی حمایت کرتا رہے گا.

انہوں نے کہا کہ آج عراق میں بعض عناصر اس ملک کی علیحدگی کی باتیں کررہے ہیں مگر ہم اس چیز کے خلاف ہیں اور یقینا عراقی کی مرکزی حکومت اور ملک کی جغرافیائی سالمیت کی حمایت کرتے رہیں گے.

٢٧٤**