اسلامی ممالک کے بعض رہنما اسلام کی وحدت کی آواز پر توجہ نہیں دیتے ہیں: سعودی میڈیا عہدیدار

مشہد - ارنا - سعودی عرب کے نبا سیٹلائٹ چینل کے سربراہ نے کہا ہے کہ اسلام محبت، امن اور بھائی چارے کا دین ہے مگر اسلامی ممالک کے بعض رہنما اس کے مطابق عمل نہیں کرتے ہیں.

يہ بات 'فواد ابراہيم' نے پير كے روز ايران كے مذہبي شہر مشہد ميں منعقدہ اسلامي ممالك كے ريڈيو اور ٹيلي ويژن كے 9ويں اجلاس كے موقع پر ارنا كے نمائندے كے ساتھ گفتگو كرتے ہوئے كہي.

اس موقع پر انہوں نے كہا كہ ابھي صورتحال ميں سعودي حكمرانوں نے اپنے مفادات كے لئے ناجائز صہيوني رياست كے ساتھ دوطرفہ تعلقات قائم كيا ہے البتہ گزشتہ سے اب تك يہ تعلقات موجود تھے مگر اب دونوں ممالك واضح طور پر باہمي تعاون كرتے ہيں.

فواد ابراہيم نے كہا كہ سعودي حكام قرآن پاك كي ہدايات كے برعكس اسلامي حكومتيں كي بجائے امريكہ، ناجائز صہيوني رياست اور برطانيہ كے ساتھ دوطرفہ تعلقات قائم كررہے ہيں.

نبا سيٹلائٹ چينل كے سربراہ نے كہا كہ مغربي ميڈيا اپنے مفادات كے لئے مسلمانوں كے ما بين تفرقہ ڈالتے اور سعودي حكمرانوں اس راستے ميں قدم اٹھ رہے ہيں.

انہوں نے اس بات پر زور ديا كہ امريكہ قريب مستقبل ميں تمام دنيا كو سعودي حكام اور ناجائز صہيوني رياست كے درميان قريبي تعلقات كو واضح كرے گا.

انہوں نے مزيد كہا كہ اسلامي ميڈيا قرآن كي تعليمات كے مطابق اور باہمي تعاون كے ذريعہ سامراجي منصوبوں كو منسوخ كر سكتے ہيں.

تفصيلات كے مطابق اسلامي ممالك كے ريڈيو اور ٹيلي وي كا 9ويں اجلاس اتوار سے منگل كے روز تك اسلامي جمہوريہ ايران كے صوبے خراسان رضوي كے مشہد مقدس ميں انعقاد ہورہا ہے جس ميں 600 ملكي اور غيرملكي مہمانوں اور 36 ممالك كے 230 چينل كے نمائندوں نے بھي شركت كي ہيں.

9393*274**