یورپ نے ایران پر کوئی نئی پابندی نہیں لگائی: قاسمی

تہران - ارنا - ایرانی دفترخارجہ کے ترجمان نے یورپی یونین کی جانب سے ایران مخالف نئی پابندیوں کے حوالے سے شائع ہونے والی افواہوں کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ جوہری مذاکرات اور حتمی معاہدے سے لے کر اب تک ایران پر کوئی نئی پابندی عائد نہیں ہوئی ہے.

'بہرام قاسمی' نے اتوار کی شام کو ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ نہ موجودہ دور میں، نہ گزشتہ مہینوں اور نہ ہی گزشتہ تین سالوں میں یورپی یونین کی جانب سے ایران پر کوئی نئی پابندی لگائی گئی ہے.

انہوں نے بعض حلقوں کی جانب سے یورپی یونین کی ایران مخالف پابندیوں کی توثیق کے دعوے کو سختی سے مسترد کردیا.

قاسمی نے کہا کہ یورپی یونین نے ایران جوہری معاہدے کے نفاذ بشمول سلامتی کونسل کی قرارداد نمبر 2231 پر عمل کرنے کے حوالے سے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے.

انہوں نے کہا کہ امریکی وعدہ خلافی کی وجہ سے بعض یورپی مالیاتی ادارے اور بینک ایران کے ساتھ تعاون کے قیام کے لئے شک میں مبتلا ہوئے تاہم ان جیسے مسائل کو بھی دوطرفہ مشاورت اور بات چیت سے حل کیا جائے گا.

بہرام قاسمی نے کہا کہ یورپی یونین کی اعلی قیادت بشمول خارج پالیسی کی سربراہ، یورپی کمیشن کے صدر اور مختلف یورپی رہنماؤں نے اس بات پر زور دیا ہے کہ ایران جوہری معاہدے کے نفاذ کے لئے پُرعزم ہیں اور اس کے علاوہ یورپی حکام نے جوہری معاہدے کے حوالے سے امریکی خلاف ورزی اور توسیع پسندانہ مطالبات کا بھی مقابلہ کیا ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ دنوں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس میں ایران جوہری معاہدے کے حوالے سے یو این سیکٹری جنرل کی ششماہی رپورٹ پیش کی گئی اور امریکی مندوب کی سر توڑ منفی کوششوں کے باوجود جوہری معاہدے کے حوالے سے ایران کی دیانت داری اور وعدوں پر قائم رہنے کو سراہا گیا.

٢٧٤**