ایران سے عراق، لبنان اور بحیرہ روم تک مزاحمت جاری ہے: ولایتی

مشہد - ارنا - ایران کی تشخیص مصلحت نظام کونسل کے اسٹریٹجیک ریسرچ سینٹر کے سربراہ نے کہا ہے کہ تہران سے آغاز ہونے والی مزاحمت کا سلسلہ موصل، بیروت، بحیرہ روم اور مسلم حساس علاقوں تک جاری رہے گا.

يہ بات سنئير ايراني رہنما 'علي اكبر ولايتي' نے ہفتہ كے روز مشہد مقدس ميں منعقدہ اسلامي ممالك كي ساتويں فلم ماركيٹ كي افتتاحي تقريب ميں خطاب كرتے ہوئے كہي.

اس موقع پر انہوں نے كہا كہ امريكہ ٹرمپ كے ذريعہ خطي صورتحالي كي تبديلي چاہتا ہے ليكن ہر روز خود كو مزيد الگ تھلگ كر ديتا ہے.

ولايتي نے كہا كہ تمام مسلمانوں كو ٹرمپ كي بے بنياد دھمكيوں سے خوفزدہ نہيں ہونا چاہيے اور عراق كي طرح شامي عوام امريكي فوج كو اپنے ملك سے باہر نكال دے.

انہوں نے اس بات پر زور ديا كہ اس خطے كي قوم امريكي حكومت كے آلہ كار نہيں بنے گي اور گزشتہ كے مقابلے ميں امريكہ مزيد الگ تھلگ ہوا ہے.

انہوں نے يمني عوام كے باہمي اتحاد كي طرف اشارہ كرتے ہوئے كہا كہ مسلمانوں اور اسلامي دنيا كا مستقبل روشن ہے اور اسلامي اتحاد كے سائے ميں تحريكيں قائم كي جائيں گي.

تفصيلات كے مطابق ايران كے صوبے خراسان رضوي مشہد مقدس شہر ميں ہفتہ كے روز اسلامي ممالك كي ساتويں فلم ماركيٹ كا انعقاد كيا گيا جس ميں اسلامي ممالك كے 137 نمائندوں نے شركت كي ہيں.

9393*271**