نائب ایرانی وزیر خارجہ اور نائب روسی وزیر دفاع کی ملاقات/ اہم امور پر بات چیت

تہران - ارنا - نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے عرب اور افریقی امور نے نائب روسی وزیر دفاع کے ساتھ ملاقات کرتے ہوئے قازقستان کے حالیہ مذاکرات کی پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا.

اعلي ايراني سفارتکار 'حسين جابري انصاري' نے آج بروز اتوار 'الکساندر فومين' کے ساتھ ملاقات کي.

اس اجلاس کے دوران فريقين نے اسلامي جمہوريہ ايران، روس اور ترکي کے تعاون سے شام ميں امن کي بحالي اور فائربندي کے قيام کے لئے قازقستان کے دارالحکومت آستانہ ميں منعقدہ مذاکرات کي کاميابي پر بات چيت کي.

تفصيلات کے مطابق قازقستان کے دارالحکومت آستانہ ميں 4 اور 5 جولائي کو شامي امن مذاکرات کے پانچويں دور کا انعقاد کيا جائے گا.

ياد رہے کہ 4 مئي کو قازقستان کے دارالحکومت 'آستانہ' ميں اسلامي جمہوريہ ايران، روس اور ترکي کي باہمي مشاورت سے شام امن مذاکرات کے چوتھے دور ميں ايران،روس اور ترکي کے سنئير سفارتکاروں کے علاوہ اقوام متحدہ کے ايلچي برائے امور شام اسٹيفن ڈيمستورا، امريکہ کے نگران وفد اور اردني نمائندے کي موجودگي ميں شام ميں امن زون کے قيام کے معاہدے پر دستخط کئے گئے جن ميں ادلب، شمالي حمص، مشرقي غوطہ اور جنوبي شام کو امن زون قرار ديا گيا.

اس معاہدے کے تحت يہ تينوں ممالک شام ميں ان چار امن زون کے قيام کے مقصد سے داعش اور النصرہ فرنٹ سميت تمام دہشتگرد گروپوں کے خلاف جنگ کے ليے ضروري اور موثر اقدامات اٹھائيں گے.

اس معاہدے ميں شامي سرکاري فورسز اور مخالف فوج کے درميان تمام فوجي کارروائيوں کي روک تھام، شامي شہريوں کو آساني سے انساني اور طبي امداد تک رسائي، بنيادي ڈھانچے کي تعمير نو اور پناہ گزينوں کي واپسي پر زور ديا گيا ہے.

اس نشست کے دوسرے اہم مقاصد میں سيکورٹی بيلٹ کی تشکيل کا قيام فوجی واقعات کو روکنے کے لئے بالخصوص تنازعہ جماعتوں کے درميان فوجی جھڑپوں کو دور کرنا اور جنگ بندی کی نگرانی کے لئے سرحدی چوکيوں اور جانچ پڑتال کے اسٹيشنوں کا جائزہ لينا ہے.

9393*271**