ایران ماحولیاتی آلودگی کا مقابلہ کرنے میں پیش پیش ہے: اقوام متحدہ

تہران - ارنا - ایران میں تعینات اقوام متحدہ کے نمائندے نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران ماحولیاتی آلودگی کا مقابلہ اور گرد کے طوفانوں کے مسئلے پر توجہ دینے کے حوالے سے اہم اقدامات کر رہا ہے.

یہ بات 'گیری لیوس' نے ہفتہ کے روز تہران میں ایرانی صدر کی نائب اور ماحولیاتی ادارے کی سربراہ 'معصومہ ابتکار' کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے اسلامی جمہوریہ ایران کی میزبانی میں آئندہ ہونے والی انسداد ماحولیاتی آلودگی کی تین روزہ بین الاقوامی کانفرنس پر روشنی ڈالی.

انہوں نے کہا کہ اس عالمی کانفرنس کو کوریج دینے کے لئے ایرانی وزارت ثقافت کے تعاون سے 15 سے 50 غیرملکی میڈیا کو بھی دعوت نامے بھیجے جاچکے ہیں.

اقوام متحدہ کے نمائندے نے مزید کہا کہ مٹی اور گرد کے طوفانوں سے دنیا کے مختلف علاقے متاثر ہورہے ہیں اس لئے ایران میں ہونے والی آئندہ کانفرنس میں دنیا کے مختلف ممالک کے نمائندے شریک ہوں گے.

انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال اقوام متحدہ میں ماحولیاتی آلودگی کا مقابلہ کرنے کے لئے چار قراردادیں پاس کی گئیں جن میں ایران نے بھی اہم کردار ادا کیا.

عالمی انسداد ماحولیاتی آلودگی کانفرنس 3 سے 5 جون تک تہران میں منعقد ہوگی.

صدر اسلامی جمہوریہ ایران ڈاکٹر حسن روحانی کے علاوہ، اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے دو نائبین، 9 بین الاقوامی ادارے اور مختلف ممالک کے وزرا بھی اس دو روزہ کانفرنس میں شرکت کریں گے.

اب تک 30 ممالک بشمول اٹلی، فرانس، جرمنی، چین، جمہوریہ آذربائیجان، بیلجئیم، قطر، سلطنت عمان، کویت، پاکستان، ارمینیا، عراق، چاڈ، ترکی، بھارت، اردن، جنوبی کوریا، اسلووکیا، سربیا اور امریکہ نے اپنی شرکت کی تصدیق کی ہے اور توقع کی جاتی ہے کہ آئندہ دنوں تک ان ممالک کی تعداد میں اضافہ ہوگا.

تین روزہ بین الاقوامی کانفرنس میں انسداد ماحولیاتی آلودگی کے لئے علاقائی اور بین الاقوامی تعاون کا جائزہ لیا جائے گا.

کانفرنس کے افتتاحی اجلاس کے بعد ماہرین اور وزرا کی سطح پہ نشستوں کا انعقاد کیا جائے گا اور اس کے علاوہ چار تکنیکی نشستیں بھی ہوں گی.

٢٧٤**