عراق میں داعش کی بدترین شکست، ایرانی دفترخارجہ کی مبارکباد

تہران - ارنا - ایرانی دفترخارجہ کے ترجمان نے عراقی شہر موصل میں داعش کے دہشتگردوں کی بدترین شکست پر مبارکباد پیش کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا ہے کہ دہشتگردوں کی جڑوں کے خاتمے کے لئے اجتماعی مقابلہ جاری رکھنا ہوگا.

'بہرام قاسمی' نے موصل میں داعش کے دہشتگردوں کے خلاف حالیہ فتح پر ایرانی مسلح افواج، حکومت اور عوام کی جد و جہد کو سراہا.

انہوں نے اس کامیابی کے موقع پر عراقی قیادت، اعلی شیعہ علما، رضاکار فورسز اور مختلف فرقوں اور الہامی ادیان کے پیروکاروں کو مبارکباد پیش کی.

قاسمی نے کہا کہ عراقی قوم کی سربلندی اور مزید کامیابی کے لئے دعاگو ہیں اور اس بات پر زور دیتے ہوئے ایران کی جانب سے ایک متحد اور آزاد عراق کی حمایت جاری رہے گی.

انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران خطے میں دہشتگردوں اور تکفیریوں کی جڑوں کے مکمل خاتمے کے لئے تمام علاقائی ممالک کے ساتھ تعاون کے لئے آمادہ ہے.

واضح رہے کہ عراقی سیکورٹی فورسز نے جمعرات کے روز 'موصل' کے قدیمی علاقوں بالخصوص تاریخی مساجد النوری اور الحدبا پر جہاں داعش کے سرغنہ ابوبکر البغدادی نے اپنی نام نہاد خلافت کا اعلان کیا تھا، مکمل کنٹرول حاصل کرلیا.

عراق کے قومی ٹیلی ویژن کے مطابق، سیکورٹی فورسز نے داعش کے اصل گڑھ پر کنٹرول حاصل کرلیا جہاں داعش دہشتگردوں کے سرغنہ ابوبکر البغدادی نے جون 2014 میں یہاں سے عراق پر اپنی نام نہاد خلافت کا اعلان کیا تھا.

واضح رہے کہ عراق میں داعش دہشتگردوں کی سرگرمیوں کے آغاز سے یہ عناصر تاریخی مسجد النوری اور اس سے ملحقہ علاقوں کو اپنے قبضے میں رکھنے کے لئے بڑی مزاحمت دیکھائی.

گزشتہ دنوں داعش کے دہشتگردوں نے موصل کی تاریخی 'النوری مسجد' اور اس کے جھکے ہوئے مینار کو شہید کیا جہاں داعش کے سربراہ ابوبکر البغدادی پہلی اور آخری بار منظر عام پر آیا تھا.

٢٧٤**