انقلاب اسلامی کے بعد ایران ڈیموں کی تعمیر میں خودکفیل ہوا ہے

تہران - ارنا - انقلاب اسلامی کی کامیابی کے بعد اسلامی جمہوریہ ایران ڈیموں کی تعمیر اور ترقی کے حوالے سے چین اور ترکی کے بعد دنیا میں تیسرے نمبر پر آگیا ہے.

انقلاب اسلامي كے بعد ايران ميں 19 قومي بڑي ڈيم تعمير ہوئے جن ميں 13 ارب 44 ملين كيوب ميٹر پاني ذخيرہ كيا جا سكتا ہے.



اس كے علاوہ ايران ميں پاني ذخيرہ كرنے كے منصوبوں كے تحت 155 بڑے اور چھوٹے ڈيم تعمير ہوچكے ہيں جس ميں 50 ارب 734 ملين كيوبك ميٹر پاني ذخيرہ كرنے كي صلاحيت موجود ہے.



ايراني وزير توانائي حميد چيت چيان نے كہا كہ ايران ميں ڈيموں كي تعمير جديد ٹيكنالوجي كے استعمال سے كي جا رہي ہے.



انہوں نے كہا كہ آج اسلامي جمہوريہ ايران ہر قسم كا پاني ذخيرہ كرنے كے منصوبے، ڈيم كي ديزائن سے ليكر ان كے تعمير تك ، اپنے اندروني وسائل كي بدولت تكميل كے مرحلے تك پہنچتاہے.





ان كے مطابق اسلامي انقلاب سے پہلے ايران غير ملكي مدد كے بغير 8 ميٹر بلندي تك كي ڈيم تعمير نہيں كرسكتا تھا ليكن گذشتہ تين دہائيوں كي مقابلے ميں آج وطن عزيز توانائي كي پيداور اور بجلي گھروں كي تعمير ميں خود كفيل ہوگيا ہے.



انہوں نے كہا كہ انقلاب اسلامي كي37ويں سالگرہ كے موقع پر 9 مزيد ڈيموں كا افتتاح كيا جائے گا جن ميں 742 ہزار كيوبك ميٹر پاني ذخيرہ كرنے كي صلاحيت ہے.



توانائي سے متعلق سنئير ايراني حكام كا كہنا ہے كہ آج اسلامي جمہوريہ دنيا كے ممالك كے مقابلے ميں بڑے پيمانے پر توانائي كے منصوبے چلانے پر سر فہرست ہے اور تعميراتي شعبے اور بڑے ڈيموں كي تعمير ميں بھي ايراني ماہرين كي اعلي كاركردگي ہے.



اسلامي جمہوريہ ايران اس وقت ہمسايہ ممالك بالخصوص عراق، تركي، آرمينيا، تركمانستان، آذربائيجان، پاكستان اور افغانستان كے ساتھ توانائي كے شعبے ميں تبادلے كے حوالے سے تعاون كر رہا ہے.



271**