ایران، روس وزرائے خارجہ کا ٹیلی فونک رابطہ/شام امن مذاکرات پر بات چیت

ماسکو - ارنا - ایران اور روس کے وزرائے خارجہ نے گزشتہ روز ایک ٹیلی فونک رابطے میں شام کے مسائل کے حل پر تبادلہ خیال کرتے ہوئے اور قازقستان کے دارالحکومت آستانہ میں شامی امن مذاکرات کو کامیاب قرار دیا.

اس ٹيلي فونک رابطے کے دوران ايراني وزير خارجہ 'محمد جواد ظريف' اور ان کے روسي ہم منصب 'سرگئي لاوروف' نے شام کي حاليہ صورتحال کا جائزہ ليا.



اس موقع پر فريقيں نے کہا کہ اسلامي جمہوريہ ايران، روس، ترکي، اقوام متحدہ کے خصوصي ايلچي برائے امور شام 'اسٹفن ڈي ميستورا' اور امريکہ کي جانب سے ايک نمائندے نے اس کامياب نشست ميں اہم کردار ادا کيا ہے.



انہوں نے کہا کہ شامي حکومت اور مخالف گروہوں کے درميان ہونے والے شامي امن مذاکرات شام ميں طويل المدت فائربندي کے لئے ايک مثبت اور اہم قدم ہے.



دونوں وزرائے خارجہ نے اقوام متحدہ کے 2254 قراردادوں پر عمل کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا شامی بحران کے حل کے لئے آستانہ میں حاصل ہونے والے کامیاب شام امن مذاکرات کے نتائج سے بھر پور فائدہ حاصل کرنے کے لئے آمادہ ہیں.



قازقستان میں تعینات امریکہ کے سفیر نے بھی شامی امن مذاکرت میں بطور مبصر شرکت کی.



دونوں وزرائے خارجہ نے شام ميں جنگ بندي کے نفاذ، سياسي مذاکرات، انساني امداد کي ترسيل اور دہشت گرد گروہوں کے خاتمے کي ضرورت پر زور ديا.



تفصيلات کے مطابق، قازقستان ميں منعقدہ دو روزہ شام امن مذاکرات کا گذشتہ منگل کے روز اختتام ہوگيا جس ميں فريقين نے مشترکہ اعلاميہ ميں ايران،روس،ترکي سہ فريقي تعاون عمل اور شامي بحران کو سياسي طور پر حل کرنے کي عالمي حمايت جاري رکھنے پر اتفاق کيا.



*9393*271**