ایران امن دوست ملک/اقوام کے درمیان دیواریں کھڑی کرنے کا زمانہ گذرگیا: ایرانی صدر

تہران - ارنا - ایرانی صدر نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران امن و دوستی کا حامی ملک ہے آج اقوام کے درمیان دیواریں کھڑی کرنے کا دور نہیں اور اگر اقوام کے درمیان کوئی دیوار رکاٹ بنی ہوئی ہو تو اسے گرانا چاہئے.

ان خيالات کا اظہار صدر مملکت 'حسن روحاني' نے ہفتہ کے روز تہران ميں منعقدہ سترہويں 'انٹرنيشنل کنونشن ٹورسٹ گائيڈز' کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کيا.



اس موقع پر انہوں نے کہا آج دنيا کي اقوام اور عوام کے درميان ديواريں بنانے کا دور نہيں، کيا لوگ بھول گئے کہ ايسي ہي ديوار برلن ميں تھي جسے گراديا گيا.



انہوں نے بتايا کہ آج پڑوسي اور ايک دوسرے کا خيال رکھنے کا دور ہے، ہمارے درميان سائنسي، تہذيبي اور ثقافتي مشترکات قائم ہيں. اس دور ميں کميونيکيشن ٹيکنالوجي سے ہمارے اور دنيا کے درميان دوريوں کا خاتمہ ہوا ہے اور کوئي بھي گلوبلائزيشن کے مقاصد کو نہيں روک سکتا.



صدر روحاني نے انٹرنيشنل کنونشن ٹورسٹ گائيڈز کانفرنس ميں دنيا کے 40 ممالک سے آئي ہوئي شخصيات اور حکام کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اگر آج دنيا اور اپنے خطے ميں قيام امن و استحکام کے خواہاں ہيں تو اقوام کے درميان پرامن باہمي بقا اور بھائي چارے کو فروغ دينا ہوگا.



انہوں نے بتایا کہ آج دہشتگرد نہ صرف اقوام کے لئے وبال جان بنے ہوئے ہیں بلکہ یہ بدنام زمانہ عناصر تاریخی مقامات اور قدیمی تہذیبوں کا خاتمہ کر رہے ہیں.



ایرانی صدر نے کہا کہ اگر ایران ، عراقی اور شامی حکومت کی مدد نہ کرتا تو آج ہم بغداد اور دمشق میں دہشتگردوں کی حکومتیں اور انتہاپسندوں کا راج دیکھتے مگر عراقی اور شامی جرات مند قوموں نے ایرانی عوام کی بھرپورحمایت کے ساتھ دہشتگردوں کا قلع قمع کرکے فتح حاصل کی ہے.



انہوں نے کہا کہ سیاحت اقوام عالم کے درمیان ایک پل کا کردار ادا کرتی ہے اور انتہاپسندانہ سوچ کے خاتمے کے لئے دنیا کی اقوام کے درمیان باہمی مشاورت اور مزید قریبی تعلقات قائم کرنے کی ضرورت ہے.



صدر روحانی نے ایران میں سیاحوں کی آمد کے حوالے سے حکومتی اعداد و شمار کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ غیرملکی سیاحتوں کی ایران آمد میں قابل قدر اضافہ ہوا ہے اور یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ ایران جوہری معاہدے سے غیرملکی مہمانوں کی ہمارے ملک آمد میں سوفیصد اضافہ ہوا ہے.



۲۷۴**