آیت اللہ رفسنجانی کا انتقال، ایرانی سفارتخانوں میں تعزیت کا سلسلہ جاری

اسلام آباد - ارنا - ایران کی نامور سیاسی شخصیت اور سابق صدر مرحوم آیت اللہ اکبر ہاشمی رفسنجانی کے انتقال پُرملال پاکستان سمیت مختلف ممالک میں قائم ایرانی سفارتخانوں میں رکھی تعزیتی کتاب پر سیاسی اور سماجی شخصیات کی جانب سے تاثرات قلمبند کرنے کا سلسلہ جاری ہے.

پاكستاني دارالحكومت اسلام آباد ميں واقع ايراني سفارتخانے ميں پير كے روز تعزيتي كتاب ركھ دي گئي جس ميں پاكستان كي اعلي سياسي، سماجي اور مذہبي شخصيات كے علاوہ غيرملكي سفيروں نے اپنے تاثرات قلمبند كئے.



يہ سلسلہ بدھ تك جاري رہے گا. آيت اللہ رفسنجاني كے انتقال كے حوالے سے پاكستان ميں موجود ايراني سفارتخانے ميں پرچم سرنگوں رہا.



دريں اثناء، دنيا كے مختلف ممالك بالخصوص چين، سپين، لبنان اور ويت نام ميں بھي ايراني سفارتخانوں كي جانب سے تعزيتي كتاب ركھي گئي ہے جس ميں اعلي شخصيات اپنے تاثرات قلمبند كر رہي ہيں.



تفصيلات كے مطابق؛ اسلامي جمہوريہ ايران كے سنئير رہنما اور باني اسلامي انقلاب امام خميني (رہ) كے قريبي دوست آيت اللہ اكبر ہاشمي رفسنجاني گزشتہ اتوار كي رات ۸۲ سال كي عمر ميں تہران ميں انتقال فرما گئے.



آيت الله رفسنجاني اسلامي انقلاب كے باني امام خميني (ره) اور سپريم ليڈر حضرت آيت الله العظمي خامنه اي كے قريبي ساتهيوں ميں سے تهے. آپ ايران ميں سنہ 1989 سے 1997 تك صدارت كے عہدے پر فائز رہے تهے.



آيت اللہ ہاشمي رفسنجاني مجمع تشخيص مصلحت نظام كے سربراہ تهے جس كا كام پارليمان اور گارڈٰين كونسل كے درميان تنازعات كو حل كرنے كي كوشش كرنا ہے.



۲۷۴**