ٹرمپ، ایران کو ہراساں اور جوہری معاہدے کو توڑنے کی کوشش کرے گا: مشیر ایرانی صدر

تہران - ارنا - ایرانی صدر کے مشیر برائے ثقافتی امور کا کہنا ہے کہ نومنتخب امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ ایران کو ہراساں کرنے کے حربے استعمال کرنے کی کوشش کرے گا تا کہ ایران جوہری معاہدے سے پیچھے ہٹ جائے اور امریکہ کو ایران پر پھر سے پابندیاں لگانے کا موقع ملے.

'حسام الدين آشنا' نے جمعرات كے روز اپنے انسٹا گرام صفحے پر مزيد كہا كہ ڈونالڈ ٹرمپ كي كوشش ہوگي كہ ايران كو ہراساں كركے ہميں جوہري معاہدے سے عملي طور پر ہٹوائيں اور اس سے امريكيوں كو ايران مخالف پابنديوں ميں اضافہ كرنے كا بہانہ بھي مل جائے گا.



انہوں نے اس بات پر زور ديا كہ ہم سب كو چاہے حكومت كے حامي ہوں يا مخالف وطن عزيز كے ملكي اور قومي مفاد كو ذہن ميں ركھتے ہوئے ايسا كوئي بھي اقدام نہيں اٹھانا چاہئے جس سے امريكيوں كو بہانہ ملے.



ايراني صدر كے مشير نے بتايا كہ اس وقت خطے ميں ہماري پوزيشن مضبوط ہے اور يہ موضوع ہمارے لئے بہت اہميت كا حامل ہے.



انہوں نے مزيد بتايا كہ جب خطے ميں عراق اور شام جيسے ہمارے دوست ممالك مشتركہ تعاون كے ذريعے دہشتگردوں كي لعنت كے خاتمے ميں فتوحات حاصل كر رہے ہيں اور دہشتگردوں كے حاميوں كو سنگين شكست ملي ہے، تو ہميں ايسے اقدامات سے گريز كرنے كي ضرورت ہے جس سے ايران كے خلاف فوجي دھمكي اور بے بنياد الزامات كي واپسي ہو.



٢٧٤**