30 ستمبر، 2016 8:21 AM
News Code: 3330079
0 Persons
اوپیک تنظیم کے فیصلے پر عالمی تاثرات

تہران - ارنا - الجیریا میں منعقد ہونے والی اوپیک تنظیم کے وزرا کی نشست اور تیل کی پیدوار کم کرنے کے لئے کئے جانے والے فیصلے بین الاقوامی ذرائع ابلاغ میں وسیع پیمانے پر توجہ کا مرکز بنا.

رائٹرز نيوز ايجنسي كے مطابق، تيل برآمد كرنے والے ممالك كي تنظيم (اوپيك) كے اراكين نے پہلي بار 2008 كے بعد تيل كي پيداوار ميں كمي لانے پر اتفاق كيا.



تفصيلات كے مطابق، ايراني وزير پٹروليم 'بيژن زنگنہ' نے اوپيك تنظيم كے حاليہ اجلاس ميں كہا كہ آج اوپيك نے ايك غير معمولي فيصلہ كيا اور ڈھائي سال كے بعد تيل ماركيٹ ميں استحكام لانے كيلئے اچھي اتفاق رائے تك پہنچ گئي.



زنگنہ اور اوپيك كے ديگر وزرا نے اعلان كيا كہ اس تنظيم روزانہ تقريبا 5/32 اور 33 ملين بيرل تك اپني تيل كي پيداوار كو كم كردے گي.



ايراني وزير پٹروليم نے مزيد كہا كہ ہم نے يہ فيصلہ كيا كہ روزانہ 700 ہزار بيرل تك اپني تيل پيداوار ميں كمي لائيں گے.



انہوں نے اس بات پر زور ديا كہ ايران تيل كي فراہمي كو محدود نہيں كرے گا اور روزانہ 4 ملين بيرل سے زيادہ پيداوار كريں گے.



اوپيك كے 171 اجلاس اس سال 30 نومبر ويانا ميں تيل ماركيٹ كے پيش رفت كے جائزے كرنے كيلئے اوپيك كے كے 14 اركان كي شركت كے ساتھ منعقد ہوگا.





9393*274**