ایران اور سلووینیا تمام شعبوں میں باہمی تعلقات کی توسیع کیلئے پُرعزم ہیں: صدر روحانی

نیو یارک - ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر مملکت سلووینیا کے ساتھ قریبی تعلقات اور موجودہ تعاون کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک موجودہ تعلقات کو مزید فروغ دینے کے لئے سیاسی طور پر مکمل پُرعزم ہیں.

ان خيالات كا اظہار صدر 'حسن روحاني' نے بدھ كي رات اقوام متحدہ كے 71ويں سالانہ اجلاس كے موقع پر سلووينيا كے صدر 'بوروت باہور' كے ساتھ ايك ملاقات ميں كيا.



انہوں نے كہا كہ جوہري معاہدے كے نفاذ سے ايران اور سلووينيا كے درميان تمام شعبوں بالخصوص اقتصادي، سياسي اور ثقافتي تعاون كو مزيد بڑھانے كے لئے مدد ملے گي.



انہوں نے ايران اور سلووينيا كے درميان دوستانہ تعلقات كا حوالہ ديتے ہوئے مزيد كہا كہ دونوں ممالك مختلف شعبوں ميں قريبي تعلقات ركھتے ہيں خاص طور سے اقتصادي شعبے ميں اور ان تعلقات ميں بہتري سے دونوں ممالك كے عوام كا فائدہ ہوگا.



صدر روحاني نے دوطرفہ اقتصادي تعاون كي توسيع كے مقصد سے ايران اور سلووينيا كے درميان بينكنگ تعلقات كي بحالي كا مطالبہ كيا.



ايراني دارالحكومت تہران ميں سلووينيا كے نئے سفارتخانہ كھولنے كے فيصلے كا خيرمقدم كرتے ہوئے صدر حسن روحاني نے مزيد كہا كہ سلووينيا حكومت كے اس فيصلے سے دونوں حكومتوں كے درميان تعلقات كو وسعت دينے ميں قابل قدر مدد ملے گي.



انہوں نے مزيد كہا كہ مشتركہ سرمايہ كاري اور اقتصادي تعاون كو فروغ دينے كے لئے ايران اور سلووينيا كے نجي شعبوں كو كردار ادا كرنے كے لئے اچھي فضا قائم كرني چاہيے.



اس موقع پر سلووينيا كے صدر مملكت نے كہا كہ ان كا ملك اسلامي جمہوريہ ايران كے ساتھ سياسي، اقتصادي اور ثقافتي ميدان ميں مشتركہ سرگرميوں كو فروغ دينے كي خواہش ركھتا ہے.



بوروت باہور نے مزيد كہا كہ سلووينيا، تہران ميں اپنے سفارتخانے كے افتتاح كے لئے اصولي فيصلہ كيا ہے جس كا اصل مقصد ايران كے ساتھ تعلقات كو مضبوط كرنا ہے.



انہوں نے اس بات پر زور ديا كہ سلووينيا، اسلامي جمہوريہ ايران كے ساتھ تعلقات كے فروغ پر آزاد ہے اور ہم اس حوالے سے كسي مخصوص ملك يا حلقوں كے تحفظات كو ہرگز اہميت نہيں ديں گے.



صدر بوروت باہور نے ايران اور سلووينيا كے درميان بڑھتے ہوئے روابط پر اظہار اطمينان كرتے ہوئے ايراني صدر حسن روحاني كو سلووينيا كے دورے كي دعوت دے دي.





۲۷۴**