ایران جوہری معاہدہ تمام عالمی بحرانوں کے حل کے لئے ایک مثالی نمونہ ہے: نائب ایرانی صدر

لندن - ارنا - نائب ایرانی صدر اور جوہری توانائی ادارے کے سربراہ نے ایران اور گروپ 1+5 کے درمیان طے پانے والے جوہری معاہدے کے مکمل نفاذ کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ معاہدہ تمام عالمی مسائل اور بڑے بحرانوں کو مذاکرات کے ذریعے حل کرنے کے لئے ایک مثالی نمونہ ہے.

ان خيالات كا اظہار 'علي اكبر صالحي' نے 'گارڈين' اخبار كو خصوصي انٹريو ديتے ہوئے كيا.



اس موقع پر انہوں نے كہا كہ جوہري معاہدہ سے ايران اور مغرب كو فائدہ ملے گا اور يہ بدقسمتي ہوگي كے يہ معاہدے پٹري سے اتر جائے.



انہوں نے اس بات پر زور ديا كہ تمام فريقين كو چاہئے جوہري معاہدے كے مكمل نفاذ كے لئے اپنا كردار ادا كريں اور اس محنت كو ضائع ہونے سے بھي بچائيں.



صالحي نے مزيد كہا كہ اسلامي جمہوريہ ايران جوہري معاہدے كے حوالے سے اپنے وعدوں پر قائم ہے مگر آٹھ ماہ گزرنے كے باوجود مغربي ممالك اپنے وعدوں پر عمل نہيں كر رہے.



انہوں نے مزيد كہا كہ جب ايران كے پُرامن جوہري پروگرام كي توثيق ميں عالمي جوہري توانائي ايجنسي (IAEA) كي حاليہ رپورٹ كو ديكھيں تو صاف نظر آتي ہے كہ ايران اپنے وعدوں پر قائم ہے مگر مغرب كا رويہ برعكس ہے جبكہ دوسرے فريق كو چاہئے پابنديوں كا مكمل خاتمہ كرتے ہوئے بينكنگ تعلقات كي راہ ميں ركاوٹوں كو ختم كريں جس كا مقصد ايران اور عالمي برادري كے درميان اقتصادي تعاون كو فروغ دينا ہے.



برطانوي وزير خارجہ كے ساتھ ہونے والي ملاقات كا حوالہ ديتے ہوئے ايراني جوہري توانائي ادارے كے سربراہ نے مزيد كہا كہ برطانيہ، ايران كے ساتھ بينكنگ تعلقات كي بحالي كے لئے بعض حكمت عمليوں پر كام كر رہا ہے.



علي اكبر صالحي عالمي جوہري ايسوسي ايشن كے سالانہ اجلاس ميں شركت كے لئے لندن كے دورے پر ہيں.





۲۷۴**