ایران،ونزویلا صدور کی ملاقات/تہران،کراکس تعلقات کی توسیع کا خیرمقدم کرتے ہیں: روحانی

ماگریٹا جزیرہ، وینزویلا - ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران اور ونزویلا کے سربراہان مملکت نے ایک ملاقات کے دوران دوطرفہ تعلقات کی توسیع، عالمی مسائل کے حوالے سے غیروابستہ تحریک کے کردار اور اس تنظیم کے رکن ممالک کے ساتھ ایرانی تعاون بڑھانے پر تبادلہ خیال کیا.

صدر مملكت حسن روحاني غيروابستہ تحريك (NAM) كے 17ويں سربراہي اجلاس ميں شركت كے لئے اس وقت وينزويلا كے مارگريٹا جزيرے كے دورے پر ہيں جہاں وہ اپني رسمي ملاقاتوں كے پہلے مرحلے ميں ميزبان ملك كے صدر نكولس ماڈورو كے ساتھ ملاقات كي.



اس موقع پر تہران اور كراكس كے ديرينہ تعلقات كو ذكر كرتے ہوئے ايراني صدر غيروابستہ تحريك كي نئي صدارت كو سنبھالنے پر وينزويلا كو مباركباد پيش كي اور اس بات پر زور ديا كہ ايران غيروابستہ تحريك پر چار سالہ صدارتي تجربات كو ونزويلا كے ساتھ تبادلے كے لئے تيار ہے.



علاقائي اور عالمي تبديليوں كے حوالے سے انہوں نے كہا كہ غيروابستہ تحريك خطي اور عالمي مسائل كے حل كے لئے اہم كردار ادا كرسكتي ہے مگر اس مقصد كے لئے تحريك كے ممالك كے درميان اتحاد اور ہم آہنگي ناگزير ہے.



انہوں نے اس بات پر زور ديا كہ ايران، وينزويلا كے ساتھ اقتصادي اور سرمايہ كاري شعبوں ميں تعاون بڑھانے كي خواہش ركھتا ہے اور باہمي مقاصد كے حصول كے لئے مشتركہ اقتصادي كميشن كي نشستوں كا انعقاد ضروري ہے.



اس موقع پر وينزويلا كے صدر نے كہا كہ ان كا ملك اسلامي جمہوريہ ايران كے ساتھ مختلف شعبوں ميں تعاون كو بڑھانے كا خواہاں ہے.



عالمي اور علاقائي منڈي ميں تيل كي قيمتوں ميں كمي وجہ سے پيدا ہونے والي مشكلات كا ذكر كرتے ہوئے صدر نكولس ماڈورو نے مزيد كہا كہ تيل كي گرتي ہوئي قيمت كي وجہ سے ممالك كو مشكلات پيدا ہورہے ہيں مگر ان مسائل كا خاتمہ تمام ممالك كے اجتماعي تعاون سے ممكن ہے.





۲۷۴**