سانحہ منی سعودی حکومت کی نااہلی کا ثبوت ہے: ایرانی اسپیکر

تہران - ارنا - ایرانی مجلس (اسپیکر) نے کہا ہے کہ منی کے المناک سانحے سے حج انتظامات میں غفلت اور سعودی حکام کی نا اہلی پوری طرح نظر آتی ہے.

ان خيالات كا اظہار 'علي لاريجاني' نے پير كے روز تہران ميں سانحہ مني ميں شہيد ہونے والے ايراني حاجيوں كي پہلي برسي كي مناسبت سے اپنے خصوصي پيغام ميں كيا.



اس موقع پر انہوں نے كہا كہ اس سال عيد الاضحي ايسے موقع پر منعقد ہورہي ہے جبكہ المناك سانحہ منيٰ سے ايران اور دنيا بھر كے مسلمانوں صدمہ اورسوگ ميں ہيں.



اس موقع پر انہوں نے سانحہ منيٰ كو سعودي حكام اور سعودي حج امور كے ذمہ داروں كي نااہلي اور ناكامي كا شاخصانہ قرار ديتے ہوئے اس بات پر زور ديا كہ اسلامي ممالك بالخصوص ايران اس المناك واقعے كي تحقيقات كا مطالبہ كريں.



لاريجاني نے كہا كہ يمن، شام، عراق، لبنان، ايران كے واقعات اور دہشت گرد اور صيہوني حكومت كي حمايت اور مني المناك واقعے ميں آل سعود كے كردار كو منظر عام پر لايا جائے.



2015 ميں حج كے مناسك ميں سعودي حكومت كي بدانتظامي اور نااہلي كي وجہ سے ايك ہي دن ميں سات ہزار افراد شہيد ہوگئے كہ ان ميں سے شہيد ہونے والے ايراني حجاج كي تعداد 464 حاجي بهي شامل تهے.





۹۳۹۳*۲۷۴**