ایران میں مزاحمتي اقتصاد پالیسی کے تحت تیل دریافت کرنے کی صلاحیت میں اضافہ

تہران - ارنا - ایران کی تیل ٹرمنل کمپنی کے منیجنگ ڈائریکٹر نے کہا ہے کہ کہا ہے کہ مزاحمتي اقتصادی پالیسی کے تحت قومی تیل کمپنی کی تیل دریافت کرنے آپریشنز اور انجینئرنگ صلاحيت میں اضافہ ہوا ہے.

يہ بات 'سيد پيروز موسوي' نے قومي تيل كمپني كے بورڈ آف ڈائريكٹرز كے اجلاس سے خطاب كرتے ہوئے كہي.



اس موقع پر انہوں نے كہا كہ 2015 سال ميں ايراني آئل ٹرمنل كمپني نے مزاحمتي معيشت ميں گھريلو تعميراتي سامان مينوفيكچررز اور تحقيقاتي مراكز و يونيورسٹيوں سے موثر رابطے كي وجہ سے سب سے اوپر 100 كمپنياں شامل كيا گيا.



انہوں نے كہا كہ خارگ اور نكا ميں آئل ٹرمنل كمپني كے تيل ٹرمينلز موجود ہيں اور ايراني تيل كي پيداوار اور برآمدات كي ذمہ دار ہے.



موسوي نے مزيد كہا كہ خليج فارس كے بہرگانسر كے تيل كے پليٹ فارم كے (SPM) كي مرمت كا آپريشن ايراني ماہرين كي تكنيكي علم اور قابليت پر تيار ہوتے ہوئے اور 6 ملين 500 ہزار يورو ملك ميں محفوظ كي جاتي ہے.





۹۳۹۳*۲۷۴**