سعودی مفتی کا ایران مخالف بیان شرمناک، امہ کی وحدت توڑنے کی سازش ہے: پاکستانی مذہبی رہنما

اسلام آباد - ارنا - سنئیر پاکستانی مذہبی رہنما نے ایران کو عاشقان مصطفی (ص) اور محبان اہل بیت (ع) کا ملک قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی مفتی کا ایران مخالف بیان شر منا ک اور مسلم امہ کی وحدت کو توڑنے کی سازش ہے.

ان خيالات كا اظہار جمعيت علماء پاكستان نيازي كے سربراہ قائد اہل سنت 'پير سيد محمد معصوم حسين نقوي' نے صوبائي دارالحكومت لاہور ميں كاركنوں سے خطاب كرتے ہوئے كيا.



انہوں نے سعودي عرب كے مفتي اعظم كے ايران كے خلاف بيان كو شرانگيز، شرمناك اور امت مسلمہ كي وحدت كو توڑنے كي سازش قرارديا ہے.



انہوں نے مزيد كہا كہ عالمي سياست كو فرقہ وارانہ اختلافات اور تكفيريت كے نظريات كي شكل ميں نہيں لانا چاہيے، كفر اور شرك كے نعرے عرب،عجم اور فارس كي بنياد پر لگنے شروع ہوگئے تو كوئي مسلمان نہيں بچے گا.



جمعيت علماء پاكستان كے قائد نے مزيد كہا كہ شام، بحرين، يمن اور ديگر عالمي ايشوز پر سعودي عرب اور ايران كے اختلافات كا مطلب نہيں كہ مخالف ملك كے بارے ميں گھٹيا زبان استعمال كي جائے.



ان كا كہنا تھا كہ ايران عاشقان مصطفي اورمحبان اہل بيت كا ملك ہے، جس نے امريكہ، ناجائز صہيوني رياست اور برطانيہ سميت تما م عالمي طاقتوں كا مقابلہ كيا اور اس كي اتحاد امت كے حوالے سے كاوشيں بھي قابل ذكر ہيں.



انہوں نے مزيد كہا كہ حج كے انتظامات كے حوالے سے ايران كي تنقيد بالكل درست ہے، كيونكہ سعودي حكومت حج كے انتظامات سنبھالنے ميں مكمل طور پر ناكام ہوئي ہے اور گذشہ سال حرم مقدس ميں كرين گرنے اور بھگڈر مچنے سے پيدا ہونے والي صورت حال ميں حجاج كي شہادت ثبوت ہے كہ آل سعود حج كے انتظاما ت كرنے ميں ناكام رہے ہيں.





۲۷۴**