دنیا کے تمام مسلمانوں حج کے موقع پر اپنے حقوق کا دفاع کریں: ایرانی شہید کی صاحبزادی

ساری - ارنا - ایرانی شہید حاجی کی صاحبزادی نے سانحہ منیٰ کو سعودی حکام اور حج امور کے ذمہ داروں کی نااہلی اور ناکامی کا شاخصانہ قرار دیتے ہوئے اس بات پر زور دیا ہے کہا کہ دنیا کے تمام مسلمانوں کو حج کے موقع پر اپنے حقوق کا دفاع کرنا چاہیے.

يہ بات مني المناك واقعے ميں شہيد ہونے والے ايراني حاجي كي صاحبزادي ' فرزانہ فروزان ' نے ايراني شمالي صوبے قائمشہر ميں ارنا كے نمائندہ كے ساتھ گفتگو كرتے ہوئے كہي.



انہوں نے كہا كہ ہم ہرگز منيٰ كے ہولناك سانحے نہيں بھوليں گے اور اس المناك سانحے ميں شہيد ہونے والوں كے لواحقين كے حقوق كا دفاع كرتے رہيں گے.



انہوں نے مطالبہ كيا كہ سانحہ منيٰ كے شہدا كا خون رائيگان نہيں جائے گا اور اس وقت ان كے لواحقين اپنے حقوق كے انتظار ميں ہيں.



متاثرہ خاتون كے والد ايراني صوبہ مازندران كے واٹر اتھارٹي كے ڈپٹي سربراہ تھے.



سانحہ منيٰ ميں شہيد ہونے والے ايراني شہريوں ميں 48 مازندراني حاجي بھي شامل تھے.





9393*274**